Title here

جس کے پلّو سےچمکتے ہوں شہنشاہ کے بوٹ ایسی دربار سے بخشی ہوئی دستار پہ تھُو شہر آشوب زدہ ، اس پہ قصید

جس کے پلّو سےچمکتے ہوں شہنشاہ کے بوٹ
ایسی دربار سے بخشی ہوئی دستار پہ تھُو
شہر آشوب زدہ ، اس پہ قصیدہ گوئی
گنبد دہر کے اس پالتو فنکار پہ تھُو
زور کے سامنےکمزور، تو کمزور پہ زور
عادلِ شہرتیرے عدل کے معیار پہ تھُو
جو فقط اپنے ہی لوگوں کا گلا کاٹتی ہو
ایسی تلوار مع صاحب تلوار پہ تھو

Posted Status in General
Recommended